شادی کی مروجہ دعوتیں ‏

شیخ الحدیث حضرت مولانا محمدزکریّا صاحب رحمہ اللہ نے ایک مرتبہ  ارشاد فرمایا:

”مجھے ان شادیوں کی دعوت سے ہمیشہ نفرت رہی (چونکہ سنت طریقہ یہ ہے کہ شادی میں سادگی ہونی چاہیئے)، میرے یہاں دیکھنے والوں کو سب ہی کو معلوم ہے کہ مہمانوں کا ہجوم بعض اوقات دو سو (۲۰۰)، ڈھائی سو (۲۵۰) تک پہنچ جاتا ہے؛ بلکہ بعض مرتبہ تو مہمانوں کی کثرت سے کئی کئی دیگوں کے پکنے کی نوبت آتی؛ لیکن شادیوں کے مد میں ایک دفعہ بھی مجھے یاد نہیں کہ ایک دیگ پکوائی ہو۔“ (ملفوظات شیخ الحدیث رحمہ اللہ، ص۱۰۰)

Source: https://ihyaauddeen.co.za/?p=7182


 

Check Also

سب سے زیادہ قابل نفرت چیز تکبّر ہے

سب سے زیادہ نفرت کی چیز میرے ذہن میں تکبر ہے اتنی نفرت مجھے کسی گناہ سے نہیں جتنی اس سے ہے۔ یوں اور بھی بڑے بڑے گناہ ہیں جیسے زنا۔شرب خمر وغیرہ؛ لیکن۔۔۔