نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی شفاعت کا حصول

عن أبي الدرداء قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: من صلى علي حين يصبح عشرا وحين يمسي عشرا أدركته شفاعتي يوم القيامة (رواه الطبراني بإسنادين وإسناد أحدهما جيد ورجاله وثقوا كذا في مجمع الزوائد، الرقم: ۱۷٠۲۲)

حضرت ابو درداء رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ ”جو شخص مجھ پر صبح کے وقت دس بار درود بھیجتا ہے اور شام کے وقت دس بار درود بھیجتا ہے، وہ قیامت کے دن میری شفاعت سے شرف یاب ہوگا۔“ (طبرانی)

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے صحابۂ کرام رضی اللہ عنہم کی محبّت

ایک شخص نے ایک مرتبہ حضرت علی رضی اللہ عنہ سے سوال کیا کہ صحابۂ کرام رضی اللہ عنہم کے دلوں میں رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی کتنی محبّت تھی ؟ حضرت علی رضی اللہ عنہ نے جواب دیا کہ ”میں اللہ تعالیٰ کی قسم کھا کر کہتا ہوں کہ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وسلم ہمارے لیے ہمارے مال، ہمارے بچّوں اور ہماری ماؤں سے زیادہ عزیز اور محبوب تھے اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی صحبت ہمارے لیے سخت پیاس کی حالت میں ٹھنڈے پانی سے زیادہ مرغوب اور پسندیدہ تھی۔“ (الشفاء بتعریف حقوق المصطفی، ج۲، ص۵۲)

يَا رَبِّ صَلِّ وَ سَلِّم  دَائِمًا أَبَدًا عَلَى حَبِيبِكَ خَيرِ الْخَلْقِ كُلِّهِمِ

Source: https://ihyaauddeen.co.za/?p=7314

Check Also

نمازِ فجر اور مغرب کے بعد سو (۱۰۰) بار درود شریف ‏

تو حضرت ام سلیم رضی اللہ عنہا نے ایک شیشی لی اور اس میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا مبارک پسینہ جمع کرنے لگیں۔ جب آپ صلی اللہ علیہ وسلم بیدار ہوئے، تو سوال کیا کہ ”اے ام سلیم یہ تم کیا کر رہی ہو؟“...